مینگورہ (زمونگ سوات ڈاٹ کام )گرلز ہائی سکول حیات آباد شاہدرہ میں 470بچے چھت سے محروم ، اس شدید گرمی میں تپتی دھوپ میں بچے پڑھنے پر مجبور، تفصیلات کے مطابق پچھلے کئی مہینوں سے 470بچیاں شدید گرمی کے باوجود کھلے آسمان میں تپتی دھوپ میں پڑھنے پر مجبور ہیں ، ہائی سکول حیات آباد میں دو کلاسوں پر مشتمل پرائمری سیکشن جس پر ہائی سکول کی پرنسپل نے زبردستی قبضہ جمایا ہوا ہے اور قوم کی بچیاں تپتی دھوپ میں پڑھ رہی ہے ، ان بچیوں کی حالت زار دیکھ کر والدین نے سکول پرنسپل اور EDOزنانہ کو درخواست بھی کی ہے لیکن کئی مہینے گزرنے کے باوجود ان بچیوں کو کمرے نہیں مل سکے ، اس کے علاوہ والدین یونین کونسل شاہدرہ کے کوسنلران کو اپنے بچوں کے مستقبل کے بارے میں خبردار کیا ہے کہ گر بچیوں کو پرائمری سیکشن کیلئے مختص دو کمرے جو کہ ہائی سکول کے پرنسپل نے قبضہ جمایا ہوا ہے نہیں ملے تو بصورت دیگر یا ہم اپنے بچوں کو سکول سے نکال دینگے اور یا اس بات کو کورٹ میں چیلنج کرینگے شاہدرہ کے جنرل کونسلر نے سکول کا دورہ کہر کے بچیوں سے خود پوچھا تو انہوں نے سکول چھورنے کا اعتراف کرتے ہوئے اس گرمی میں کھلے آسمان تلے مزید پڑھنے سے انکار کردیا ، جس پر کونسلر نے بچیوں کو اور والدین کو تسلی دلا کر کہا کہ ان بچیوں کی مستقبل بچانے کیلئے ہم آخری حد تک جائینگے ان بچیوں کو ان کا حق دلانے کیلئے ہر ممکن کوشش کرینگے اور اس راہ میں رکاؤٹ بننے والے ہر عناصر کا ڈٹ کر مقابلے کرینگے ۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
1098 مناظر