دیر بالا (زمونگ سوات ڈاٹ کام )خیبر پختونخواہ کےضلع دیر میں حکام کا کہنا ہے کہ پیر کے شام ہونے والے بم دہماکے میں امن لشکر کے سربراہ خان محمد سمیت لشکر کےسات ممبران جاں بحق ہوگئے ہیں تھانہ کنٹرول روم کے اہلکار ریاض نے میڈیا کو بتایا کہ واقعہ دیر بالا کے علاقے ڈوگ درہ میں اس وقت پیش ایا جب امن لشکر کے ممبران گاڑی میں علاقے میں ہونے والے ایک جرگے کے بعد واپس ارہے تھی کہ بدر کنی موڑ کے مقام پر اسے نشانہ بنایاگیا
مقامی لوگوں کے مطابق جاں بحق ہونے والا محمد خان ڈوگ درہ امن لشکر کا سربراہ تھا جبکہ ان کے ساتھ دیگر جاں بحق ہونے والوں میں کبیر حان ، امان ، سمیع اللہ ، محمد جان عدیل اور حبیب اللہ شامل ہیں واقعے کے بعد پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لےکر سرچ اپریشن شروع کردیا ہیں
خیال رہے کہ اس سے پہلے بھی اس علاقے میں امن کمیٹیوں اور قومی لشکر کے رضاکاروں پر بم حملے ہوتے رہے ہیں جسمیں متعدد ہلاکتیں ہوئی ہیں اور کچھ عرصہ قبل بھی ایک بم حملے میں امن کمیٹی کے چار افراد جاں بحق ہوگئے تھے.




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
2125 مناظر