اسلام آباد(زمونگ سوات آن لائن نیوز)وفاقی وزیرمنصوبہ بندی احسن اقبال نے کہاہے کہ خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے سی پیک کے معاملے پر عدالت جانے کا فیصلہ خود کے پی کے لئے مشکلات پیدا کرنے کا باعث بنے گا ،مغربی روٹ پر زور و شور سے کام جاری ہے ، گوادر تا کوئٹہ شاہراہ وقت سے پہلے مکمل کر لی گئی ہے،سی پیک میں کسی صوبے کے ساتھ کوئی زیادتی نہیں ہوئی،سی پیک جیسے اہم قومی منصوبے کو جماعتی اور علاقائی مفادات کے لئے استعمال کرنا نامناسب ہے۔اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر نے کہاکہ خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے سی پیک کے معاملے پر عدالت جانے کا فیصلہ خود کے پی کے لئے مشکلات پیدا کرنے کا باعث بنے گا ۔انہوں نے کہاکہ بیرونی سرمایہ کاری عدالتوں کے ذریعہ راغب نہیں ہوتی، الٹا کتراتی ہے۔احسن اقبال نے کہاکہ 29 اگست کو وزیر اعلی کے پی سی پیک سمٹ میں اسکی پرزور حمایت کر کے اچانک کیسے پھر گئے؟ ۔وفاقی وزیر نے کہاکہ مغربی روٹ پر زور و شور سے کام جاری ہے ، گوادر تا کوئٹہ شاہراہ وقت سے پہلے مکمل کر لی گئی ہے۔انہوں نے کہاکہ اگر عدالت میں جاکر کے پی حکومت کی تسلی ہوتی ہے تو انہیں روک نہیں سکتے ۔انہوں نے کہاکہ سی پیک میں کسی صوبے کے ساتھ کوئی زیادتی نہیں ہوئی۔وفاقی وزیر نے کہاکہ اقتصادی راہداری کے منصوبوں سے کم ترقی یافتہ اور پسماندہ علاقوں کو زیادہ فائدہ ہوگا۔احسن اقبال نے کہاکہ سی پیک جیسے اہم قومی منصوبے کو جماعتی اور علاقائی مفادات کے لئے استعمال کرنا نامناسب ہے۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
350 مناظر