لاہور (زمونگ سوات آن لائن نیوز) طبی ماہرین نے خبر دار کیا ہے کہ پاکستان میں سانس کی نالیوں کی بیماری تیزی سے پھیل رہی ہے ، ہر سال 70 لاکھ افراداس بیماری میں مبتلا ہوتے ہیں،2020ء تک یہ بیماری اموات کی سب سے بڑی وجہ بن جائیگی۔طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ سانس کی نالیوں بیماری زیادہ تر انسان خود پیدا کرتا ہے، 40سے 45 سال کی عمر میں لاحق ہونے والی اس بیماری کی بڑی وجہ سگریٹ نوشی ہے، اس کے علاوہ یہ عارضہ موروثی بھی ہوسکتا ہے۔ ماہرین کے مطابق پاکستان میں 2 کروڑ لوگ سگریٹ پیتے ہیں جن میں 33فیصد مرد اور4 اعشاریہ 37 فیصدخواتین شامل ہیں، کمرے میں سگریٹ کے دھویں کا اثر 6 گھنٹے تک رہتا ہے، گوبر اورمچھر بھگانے والے کوائل کا دھواں بھی سانس کی بیماری پھیلاتا ہے۔طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ سانس کی بیماری لگ جائے تو مشکل سے جاتی ہے، اگلی نسلوں کو سانس کی بیماری سے بچانے کیلئے ضروری ہے کہ تمباکو نوشی اورزہریلے دھویں سے دوررہا جائے۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
1282 مناظر