سوات(زمونگ سوات ڈاٹ کام)وزارت تجارت، حکومت پاکستان کے زیر اہتمام سوات تجارتی نمائش میں درجنوں غیرملکی سفیروں نے شرکت کرکے دنیا کو یہ پیغام دیا ہے کہ سوات ایک پرامن علاقہ بن چکا ہے اور اب سوات کے لوگوں کی سماجی اور معاشی ترقی ناگزیر ہے، ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر تجارت جناب انجنیئر خرم دستگیر نے سوات تجارتی نمائش کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے موقع پر کیا۔ انہوں نے کہا کہ سوات کے لوگوں نے ایک مشکل وقت گزارا ہے اورعلاقہ میں امن کی بحالی میں پاک افواج کا کردار قابل تحسین ہے۔ انہوں نے کہا کہ سوات اندھیروں سے روشنی کے سفر کا آغاز کر چکا ہے اور یہ روشنی ترقی اور خوشحالی کی نوید ہے۔انہوں نے کہا کہ سوات کے لوگ محنت کش ہیں اور ہمارا فرض بنتا ہے کہ یہاں کے ہنرمند افرادی قوت کو ان کی مصنوعات کا نہ صرف بہترین معاوضہ ملے بلکہ ان کو برآمد کا بھی بندوبست کیا جائے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ سوات تجارتی نمائش کا انعقاد ہر سال کیا جائیگا جبکہ ٹڈاپ کے سوات میں موجود دفتر کو مزید فعال اور متحرک کیا جائے گا تاکہ یہاں کی مصنوعات اور زرعی اجناس کو بین الاقوامی منڈی کے لئے مارکیٹ کیا جاسکے۔افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئیسوات سے رکن قومی اسمبلی مسرت احمد زیب نے کہا کہ وہ وزارت تجارت کی مشکور ہیں جنہوں نے سوات میں تجارتی نمائش کا انعقاد کیا۔انہوں نے یہ نمائش زیادہ بڑے پیمانے پر ہر سال منعقد کرنے کا مطالبہ بھی کیا جسے وزیر تجارت نے تسلیم کرلیا۔جی او سی سوات میجر جنرل عارف غفور نے کہا کہ سوات تجارتی نمائش کے انعقاد سے دنیا میں پاکستان کے حوالے سے پائے جانے والے منفی تاثرات کو ختم کرنے میں مدد ملے گی۔انہوں نے تقریب میں موجود سفیروں کو مخاطب ہوتے کہا کہ سوات ایک پرامن وادی بن چکی ہے اور اس کی خوشحالی اور ترقی کیلئے وہ اپنا کردار ادا کریں۔ ٹڈاپ کے سربراہ سید منیر نے کہا کہ سوات کی مصنوعات کو برآمد کرنے کیلئے مارکیٹنگ کی جائے گی تاکہ اس سے ملکی خزانے کو مستحکم کرنے میں مدد مل سکے۔انہوں نے کہا کہ سوات میں درمیانے درجے اور چھوٹی صنعتوں کو ترقی دلوانے میں ٹڈاپ اپنا کردار ادا کرے گا۔ کمشنر سوات نے نمائش کے مندوبین اور شرکاء کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ سوات تجارتی نمائش جیسی سرگرمیوں کا انعقاد علاقے کی معاشی ترقی میں کلیدی کردار ادا کرے گا۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
864 مناظر