بٹ خیلہ (زمونگ سوات ڈاٹ کام)وفاق کے زیر انتظام مالاکنڈ لیوی فورس پولیس اور صوبائی لیویز کے حقوق سے محروم رہ جانے کے سبب اہلکاروں میں شدید تشویش کی لہر دوڑ گئی پولیس کی طرح ڈیوٹی دینے کے باوجود مختلف الاونسز کا نوٹی فیکیشن جاری نہیں کیا جاسکا سابق صدر پاکستان کی جانب سے تمام الاؤنسز منظور کرنے کے باوجود سیفران ڈویژن نے سرکاری فائل میں صرف رسک الاؤنس شامل کرکے باقی تمام الاؤنسز ختم کردئیے انتہائی باخبر ذرائع کے مطابق 27اپریل 2010ء کو باجوڑ ایجنسی میں سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے اعلان کیا تھا کہ پاٹا اور فاٹا میں جتنے بھی لیوی فورس ہیں ان سب کی تنخواہیں پولیس کی برابر ہوں گی تاہم بعدازاں جب لیوی کی فائل تیار ہوئی تو اس میں صرف رسک الاؤنس /سپیشل الاؤنس کا ذکر کیا تھا مگر دیگر الاؤنسز سپیشل رسک الاؤنس ، راشن الاؤنس ، کنسٹلری الاؤنس ، سپیشل الاؤنس ،سیون ڈیز الاؤنس جو کہ پولیس اور صوبائی لیویز کو باقاعدگی سے ملتی ہے مالاکنڈ لیوی فورس کو مذکورہ الاؤنسز سے محروم رکھا گیا ہے ذرائع کے مطابق سیفران ڈویژن نے رسک الاؤنس کی فائل بنا کر ریگولیشن ونگ کو بجھوادی ہے جو کہ 13جولائی 2016ء کو منظور ہوئی ہے مگر بدقسمتی سے پولیس کے اینیشل پے 5010روپے کے حساب سے لیوی فورس کے لئے 2008ء کے اینیشل پے کے تحت رسک الاؤنس 3340روپے منظور ہوئی جو کہ انتہائی کم ہے اس حوالے سے سابقہ ڈی سی کمانڈنٹ لیوی فورس نے سیفران سے خط وکتابت کی تھی مگر ابھی تک کوئی پیش رفت نہیں ہوئی مذکورہ الاؤنسز جو کہ فیڈرل لیویز کاجائز حق ہے اس کی فائل نمبر F.4(10)-LK/2013سیفران ڈویژن میں پڑھی ہے پر فوری کاروائی کرنے کی ضرورت ہے عوامی وسماجی اور سیاسی حلقوں نے صدر پاکستان ، وزیر اعظم پاکستان اور وفاقی وزیر سیفران سے مطالبہ کیا ہے کہ مالاکنڈ لیوی فورس کی مذکورہ الاؤنسز فوری منظور کرکے فورس میں پائی جانے والی بے چینی اور تشویش کا خاتمہ کیا جائے ۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
642 مناظر