سوات ، امن اور برداشت کے ماحول کو پروان چڑھانے میں طلباء کے کردار پر سیمینار

This post is available in : enEnglish (English)




سوات ( زمونگ سوات ڈاٹ کام ) سیمینارکامقصد طلباء وطالبات کوامن اوربرداشت کے ماحول کوپروان چڑھانے میں نوجوانوں کی کردارواہمیت سے آگاہ کرنا تھا،گزشتہ روز یونیورسٹی آف سوات میں نیشنل کاؤنٹرٹیررزم اتھارٹی اور یونیورسٹی کی طرف سے طلباء وطالبات میں امن و برداشت کے ماحول کوپروان چڑھانے میں طلباء کے کردار کے حوالے سے وائس چانسلر ڈاکٹرحسن شیرکی سربراہی میں ایک روزہ سیمینارکا انعقاد کیاگیا۔ سیمینار کامقصد طلباء وطالبات کو امن کی اہمیت اوراس میں نوجوانوں خصوصاََ طلبا کے کردار کے حوالے سے آگاہ کرنا تھا۔ اس موقع پر سیمینار کے مہمان خصوصی اور نِکٹا کے نیشنل کوارڈینٹر احسان غنی نے شرکاکوامن وبرداشت کے موضوع پرپریزنٹیشن دیتے ہوئے کہا کہ جن قوموں میں برداشت ختم ہوتی ہے وہاں دہشت گردی جیساناسورجنم لیتاہے۔ اُنہوں نے کہا کہ اسلام ہمیں امن وبرداشت کا درس دیتا ہے ۔ اُنہوں نے طلباء کومخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ منفی سوچ کو ترک کرکے ہمیشہ مثبت سوچے کیوں کہ منفی سوچ ترقی اور امن کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ بلاشبہہ ہمارے ملک میں سب اچھانہیں لیکن سب خراب بھی نہیں ابھی بھی پاکستان دنیا کے کئی ممالک سے معاشی طورپرمستحکم اور زیادہ ترقیافتہ ہیں۔ اُنہوں نے طلباء کویقین دیہانی کراتے ہوئے بتایا کہ نِکٹا اُن کے لئے انٹرنشپ پروگرام کا آغاز کر رہی جس میں میرٹ کی بنیاد پرایسے طلباء کا انتخاب کیا جائیگا جوگراس روٹ لیول پر امن کے لئے پالیسی بنانے میں کرداراداکرنے کے قابل ہو۔اس موقع پر یونیورسٹی کے وائس چانسلرورجسٹرار ڈاکٹرحسن شیرنے سیمینار کے آرگنائزرز ضیاء اللہ طورو ڈائریکٹر نکٹا، مجیب الرحمٰن تنولی ڈپٹی ڈائریکٹرنکٹا، عمران لیکچر ودیگرکاشکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے پشتون روایات اور دین دونوں ہمیں ایک دوسرے سے رواداری اور امن کا درس دیتاہے۔ اُنہوں نے کہا کہ نیشنل کاؤنٹرٹیررزم اتھارٹی کے لئے یونیورسٹی کے دروازے ہروقت کھلے ہیں اورامید ہے کہ وہ مستقبل میں بھی یونیورسٹی میں ایسے مفید سیمینارز کا انعقاد جاری رکھے گے۔ سیمینار کے اختتام پرپروگرام کے آرگنائزر وفیکلٹی ممبران کواعزازی شیلڈسے نوازہ گیا۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
21 مناظر