تبدیلی کے دعویداروں کی حکومت میں کئی گاؤں سے امتیازی سلوک ہورہا ہے،قاری محمود




مٹہ سوات ( زمونگ سوات ڈاٹ کام)جمیعت علماء اسلام کے ضلعی امیر قاری محمود نے کہا ہے کہ تبدیلی کے نعرے لگانے والوں نے ترقیاتی کاموں میں تعصب شروع کرکے بعض علاقوں کو سہولیات سے مکمل طور پر محروم کررکھا ہے۔انٹرنیٹ کے دور میں سردان کی عوام کو روڈاورپانی کے سہولت تک میسر نہیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کویہ قوم مسلم نظر نہیں آتی‘ یہاں کی لوگ نہ تو غیر ملکی اور نہ کہیں اورجگہ سے آئے ہیں بلکہ پاکستانی اور اسی حلقہpk84کے رہائشی ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سردان مٹہ سوات میں شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے مذید کہا کہ موجودہ حکومت نے سکولوں اور کالجوں میں لڑکے اور لڑکیوں کو کلاسزمیں مشترکہ بٹھاکر غیر ملکی ایجنڈے کو پورا کیا۔انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے کے دور حکومت میں سکولوں کو فری کتابیں مہیاں کئے گئے اور ہرجگہ پر عوام کو بنیادی سہولیات دی۔ شمولیتی تقریب میں علاقے کی عوام بڑی تعداد میں دیگر پارٹیوں سے مستعفی ہوکر جمیعت علماء اسلام میں شامل ہوئے اور قائد جمیعت مولانا فضل الرحمان کے مشن کو گھر گھر تک پہنچانے کا عزم کرتے ہوئے کہا کہ ہم تبلیغ کے شکل میں علماء کی پیغامات کو آگے پہنچائیں گے۔شمولیتی تقریب میں ضلعی جنرل سیکرٹری اسحاق زاہد اورڈاکٹر امجد علی نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انصاف کی حکومت میں عوام کے ساتھ جتنا امتیازی سلوک کیا گیا یہ کسی اور حکومت میں نہیں ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک اسلامی ریاست ہے اور یہاں کی لوگوں کو ٹی وی پر نچاکر بدنام کرنا یورپ کی بہت بڑی سازش تھی جو تحریک انصاف نے سرانجام دی۔انہوں نے کہا کہ اپنے مستقبل یعنی نئے نسل کو دنیا وآخرت کی تباہی میں کردار ادا کرنے والوں سے بچانا ہوگا۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
54 مناظر