اسوقت اگر حکومت گرانے کا بھی مطالبہ کرتے تو جنرل صاحب نے مان جانا تھا، خادم رضوی کا دھرنا کے شرکا سےپرجوش خطاب




اسلام آباد (زمونگ سوات ڈاٹ کام) زاہد حامد کا استعفیٰ ختم نبوت کی وجہ سے ہے، اور بھی مطالبات کر سکتے ہیں ، اس وقت ہم جنرل صاحب کو جو بھی کہتے انہوں نے مان جانا تھاپھر سب نے بعد میں کہنا تھا کہ یہ حکومت ہٹانے کیلئے آیا ہےاس لئے کوئی اور بات نہیں کی، ختم نبوتؐ کے قانون میں ردوبدل کرنے والوں کو بے نقاب کیا جائے گا اور ان کے خلاف ایف آئی آر کے اندراج کے بعد قانون کےمطابق سزا بھی ہو گی، خادم رضوی کا دھرنے کے شرکا سے خطاب، دھرنا ختم کرنے کا ایک بار پھر اعلان، تفصیلات کے مطابق تحریک لبیک یا رسول اللہ کے امیر علامہ خادم رضوی نے ایک بار پھر دھرنا ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے دھرنے کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے معاہدے کے تحت دھرنا ختم کیا ہے اور ہم اس معاہدے کی پابندی کرینگے ، ہم نےدھرنا ختم کرنے کیلئے 12گھنٹے کا وقت لیا ہے ، ہمارے پنڈی اور اسلام آباد کے کارکن یہاں آجائیں گے اور تب تک ہم سامان سمیٹ لیں گے جس کے بعد طے کردہ طریقہ کار کے تحت گھروں کو چلے جائیں گے۔ خادم رضوی نے دھرنا آپریشن پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس کو نہیں بھول سکتے اور نہ ہماری آنیوالی نسلیں اس کو بھولیں گی، زاہد حامد کا استعفیٰ ختم نبوتﷺ کی وجہ سے ہے۔ خادم رضوی کا کہنا تھا کہ ہم اور مطالبے بھی سامنے رکھ سکتے تھے اور اس وقت ہم جو بھی مطالبہ کرتے جنرل صاحب نے مان جانا تھا کیونکہ وہ اس معاہدے کے ضامن تھے مگر پھر بعد میں کہا جاتا کہ یہ حکومت ہٹانے کیلئے آیا ہے۔ انشا اللہ ختم نبوتﷺ کے قانون میں ردوبدل کرنے والے جلد بے نقاب ہونگے اور ان کے خلاف ایف آئی آر کے اندراج کے بعد قانون کے مطابق سزا بھی ہو گی۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
49 مناظر