امریکہ 25 ارب کیلئے ذلیل کر رہا ہے ٗ مولانا فضل الرحمان نے امریکی سفیر سے کیابیچنے کی بات کی؟عمران خان نے سنگین الزام عائد کردیا




اسلام آباد (زمونگ سوات ڈاٹ کام ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ پاکستان مخالف بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ 25 ارب روپے کے لیے ذلیل کر رہا ہے ٗ اسحاق ڈار کے بیٹے کے دو ٹاور ہی 25 ارب روپے کے ہیں ٗہمارے اپنے لیڈر ملک کو بدنام کرنے پر تلے ہوئے ہیں ٗملک کے ادارے مافیا کے ہاتھوں مفلوج ہیں ٗہمیں انڈین لابی کی ضرورت نہیں ٗ افغانستان کا امن پاکستان کے مفاد میں ہے ٗ شہباز شریف ڈرامے باز ہیں ٗوزیر اعلیٰ پنجاب امریکیوں کو خوش کرنے کے لیے ہر روز نیا ہیٹ پہنتے ہیں ٗدونوں بھائی امریکہ سے کہتے ہیں تیسری باری بھی دلوا دیں ٗ مولانا فضل الرحمان نے امریکی سفیر سے ووٹ بیچنے کی بات کی۔ جمعہ کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے پاکستان کو دی جانے والی دھمکی کے حوالے سے عمران خان نے کہاکہ امریکا اپنی 16 سالہ ناکامیوں کا ملبہ پاکستان پر ڈال رہا ہے جبکہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دی ہیں۔عمران خان نے کہا کہ امریکا ہمیں 25 ارب روپے کے نام پر ذلیل کر رہا ہے، اسحاق ڈار کے بیٹے کے دو ٹاور ہی 25 ارب روپے کے ہیں انہوں نے سابق وزیراعظم کا بھی حوالہ دیا اور کہا کہ نواز شریف کے 300 ارب روپے ملک سے باہر پڑے ہیں، جو وہ چوری کرکے لے گئے تھے۔عمران خان نے امریکا کے موجودہ رویے کا ذمہ دار اپنے ملک کے طبقہ اشرافیہ کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں انڈین لابی کی ضرورت نہیں، ہمارے اپنے لیڈر ملک کو بدنام کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور اس ملک کے ادارے مافیا کے ہاتھوں مفلوج ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان دنیا کا وہ واحد ملک ہے جو افغانستان میں مکمل امن چاہتا ہے اور افغانستان کا امن پاکستان کے مفاد میں ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو سب سے بڑا ڈرامے باز قرار دیتے ہوئے عمران خان نے دعویٰ کیا کہ وہ امریکیوں کو خوش کرنے کے لیے ہر روز نیا ہیٹ پہنتے ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین نے کہاکہ پاکستان میں سب لوگ شلوار قمیض پہنتے ہیں لیکن شہباز شریف نے اپنے سارے سوٹ نکالے ہوئے ہیں اور اسی لیے ہر روز نئے نئے ہیٹ (ٹوپی) پہنتے ہیں تاکہ امریکیوں کو یہ بتا سکیں کہ میں بھی ان ہی کی طرح ہوں۔عمران خان نے شریف برادران کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ دونوں بھائی دو دو مرتبہ بالترتیب وزیراعظم اور وزیراعلیٰ رہ چکے ہیں اور انہوں نے امریکیوں سے مطالبہ کیا کہ انہیں تیسری مرتبہ بھی باری دلوا دی جائے۔عمران خان نے دعویٰ کیا کہ شہباز شریف نے گزشتہ دور میں امریکہ سے حکومت بحال کروانے کی درخواست کی تھی۔پی ٹی آئی چیئرمین نے الزام عائد کیا کہ شہباز شریف اور وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ نیانتہا پسندگروپوں کو پالا ہوا ہے۔عمران خان نے کہاکہ پاکستان کی کسی عدالت نے 25 سال تک لاڈلے کا کیس نہیں سنا ٗملک کے ادارے مفلوج ہوچکے ہیں ٗمافیا نے اداروں پر قبضہ کیا ہوا ہے، وزیر اعظم کا کام ملک کو تحفظ فراہم کرنا ہوتا ہے، جب آپ خود اپنی فوج کے خلاف باتیں کریں گے تو دنیا کے لیڈر تو آپ پر چڑھ کر آئیں گے ٗاسی لیے امریکی موجودہ رویے کا ذمہ دار اپنے ملک کے اشرافیہ کو قرار دیتا ہوں۔عمران خان نے کہا کہ گوادر سے خیبر تک سب کو پاناما لیکس کا پتا چل گیا ہے ۔ چیئر مین پی ٹی آئی نے کہاکہ ہمیں کسی دشمن کی ضرورت نہیں کیونکہ ہمارے لیڈر خود ہی ملک کو بدنام کہہ رہے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف نے امریکیوں سے کہا کہ میں آپ کا بیسٹ فرینڈ ٗ ہوں ٗظاہر ہوگیا کہ ختم نبوت شق میں ردوبدل کس کو خوش کرنے کیلئے کی۔ انہوں نے کہا کہ فضل الرحمان نے امریکی سفیر سے ووٹ بیچنے کی بات کی، سیاسی ایلیٹ نے ہماری عزت نفس کو ختم کر دیا ٗ ہم اسی قوم سے پیسہ اکھٹا کر کے امریکہ کو بتائیں گے ٗہم عزت دار قوم ہیں۔ انہوں نے کہاکہ نواز شریف کا شکریہ ادا کرتا ہوں،انہوں نے کہا انتخابات شفاف نہیں ہوتے ۔ عمران خان نے خواجہ آصف پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وزیر خارجہ امریکہ میں کہتے ہیں اپنا گھر ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے۔ عمران خان نے کہا کہ افغانستان میں امن کے سب سے زیادہ خواہاں ہیں، ہم نے امریکیوں کے کہنے پر اپنے قبائلی علاقے تباہ کر دیئے۔عمران خان نے کہا کہ شریف برادران نے سعودی عرب میں جا کر شاہی خاندان کو کہا کہ حکومت یمن میں اتحادی فوج کا ساتھ دینے کیلئے پاک فوج کو بھیج رہے تھے لیکن اس وقت کے آرمی چیف جنرل (ر) راحیل شریف نے اس کی مخالفت کی تھی۔عمران خان نے کہا کہ پاکستان نے کسی اور کی جنگ میں بے پناہ قربانیاں دیں اور آج امریکا جو کچھ کر رہا ہےاس کی ذمہ دار بھی سیاسی اشرافیہ ہے۔عمران خان نے کہا کہ دنیا بھر میں امریکی سفارتخانوں کی جانب سے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کو جاری کی جانے والی تفصیلات وکی لیکس کے ذریعے منظر عام پر آئیں جن میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ نواز شریف نے امریکی سینیٹرز کو کہا تھا کہ ممبئی کے حملے پاکستانیوں نے کرائے ہیں جس کے خلاف ایکشن مسلم لیگ (ن) کی حکومت کرے گی۔وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف نے امریکی حکام کو کہا تھا کہ جماعت الدعوۃ کے ہسپتال اور مدرسوں کو ٹیک اوور کرنا چاہتے ہیں جس کیلئے امریکا سے معلومات درکار ہے تاکہ اس گروپ کے خلاف عدالتی کارروائی کا آغاز کریں۔عمران خان نے وکی لیکس کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ شہباز شریف نے امریکی سفارتکار کو کہا کہ ہم جانتے ہیں چوہدری افتخار احمد خطرہ ہیں۔تحریک انصاف کے سربراہ نے کہا کہ شہباز شریف اور نواز شریف نے امریکا مطالبہ کیا تھا کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کی جانب سے بنائے گئے ایک شخص کو 2 سے زائد مرتبہ وزارت عظمیٰ اور اعلیٰ کے عہدے پر فائز نہ ہونے کے قانون کو ختم کروا کر تیسری مرتبہ وزیرِاعظم اور وزیر اعلیٰ بنوادیں۔انہوں نے کہا کہ شریف برادران نے امریکیوں سے مطالبہ کیا تھا کہ انہیں حکومت بحال نہ ہونے کی صورت میں ’فیس سیونگ‘ دے دی جائے جبکہ ایک اور مطالبہ کرتے کہا تھا کہ پاکستان میں صدر کے تمام اختیارات وزیراعظم کو واپس دے دیئے جائیں۔اس سے قبل عمران خان نے پاک فضائیہ کے پہلے مقامی سربراہ سابق ایئرچیف مارشل اصغر خان کی وفات پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اصغر خان ایماندار، صادق اور امین تھے۔انہوں نے کہاکہ مجھے خوشی ہوئی تھی کہ اصغرخان نے اپنی پارٹی پی ٹی آئی میں ضم کی تھی اور انہوں نے انتخابات میں دھاندلی پر بڑی جدوجہد کی۔عمران خان نے کہا کہ اصغر خان کیس پر پوری طرح پیش رفت کریں گے۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
25 مناظر