صوبے میں سودی نظام کے خلاف بل پاس کرنے والے ہر سال15ارب روپے سود پر اداکریں گے،قاری محمود




مٹہ سوات(زمونگ سوات ڈاٹ کام) جمعیت علماء اسلام کے زیر اہتمام مٹہ سوات دارمئی میں شمولیتی اجتماع منعقد ہوا جسمیں بڑی تعداد میں لوگوں نے دوسرے پارٹیوں کو چھوڑ کر جمعیت علماء اسلام میں شمولیت کا اعلان کیا۔اس موقع پر ضلعی امیر قاری محمود‘ ڈاکٹر امجد علی‘مولاناداؤد حسن اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایم ایم اے نے اپنے دور حکومت میں سود پر پیسے نہیں لئے اور ہر چیز کی قیمتیں برقرار رکھے تھے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت نے سود پر اربوں روپے لیکر صوبے کو قرضوں میں ڈبودیاہے،انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے دور حکومت میں ریکارڈ ترقیاتی کام ہوئے ہیں پی کے84میں مٹہ تا فاضل بانڈہ روڈ کی منظوری ایم ایم اے کی دور حکومت میں ہوئی تھی لیکن آج ہمارے ترقیاتی کاموں پر تختیاں لگانے والے عوام کو گمراہ کررہے ہیں۔ضلعی امیر نے مذید کہا کہ امیر مقام نے ملک کے پیسوں پر جگہ جگہ بنگلے بنادئے لیکن کوئی ان پر ہاتھ ڈالنے کو تیار نہیں۔ڈاکٹر امجد علی نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کے وزیر نے ہر یونین کونسل میں سٹیڈیم کی تعمیر کا اعلان کیا تھا لیکن وہ آج تک پہاڑوں وکھیتوں میں کھیلنے والے نوجوانوں کو نہیں دیکھتے۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف والوں کی دعوؤں کو ایم ایم اے عملی جامہ پہنائیں گے اور ایم ایم اے کے دور حکومت میں عوام ضرور تبدیلی محسوس کریں گے۔شمولیتی اجتماع میں دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
11 مناظر