سوات کے کل 1631سکولوں میں صرف 593سکولز لڑکیوں کیلئے ہے ، ڈاکٹر جواد




سوات ( زمونگ سوات ڈاٹ کام)11 فروری کو عورتوں کا عالمی دن برائے سائنس کے طور پر منایا جاتا ہے۔ پوریے دنیا میں 11فروری کو عورتوں کا عالمی دن برائے سائنس کے طور پر منایا جاتا ہے۔ایک سروے کے مطابق پوری دنیا میں 18فیصد خواتین بیچلر ، 8فیصد خواتین ماسٹر جبکہ صرف 2فیصد پی ایچ ڈی تک پہنچ پاتی ہے۔ضلعی تعلیمی درجہ بندی 2017 رپورٹ کے مطابق پاکستان کے 151اضلاع میں سوات 86نمبر پر ہے۔ تعلیم کیلئے سرگرم ڈاکٹر جواد اقبال نے کہا کہ سوات کے کل 1631سکولوں میں صرف 593سکول لڑکیوں کیلئے ہے۔ انھوں نے کہا کہ پورے ضلع میں لڑکیوں کے گیارہ لاکھ آبادی کیلئے صرف 8کالجزہیں۔ میٹرک کے حالیہ امتحانات میں لڑکوں کے نسبت زیادہ لڑکیوں نے آرٹس سکولوں کی کمی کیوجہ سے لیا۔ انھوں نے کہا کہ کہ ہماری بدقسمتی یہ ہے کہ بچیوں کو سکول میں سائنس پڑھایا جاتا ہے سکھایا نہیں جاتا۔بچیوں کو سائنس کے پر یکٹیکل اکثر نہیں کرائے جاتے ۔ ڈاکٹر جواد اقبال نے کہا کہ سوات میں جماعت پنجم کے صرف 44فیصد بچے جماعت دوئم کے ریاضی کے سوالات حل کراسکتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ سہولیات کی عدم دستیابی کے باوجود سوات سے تعلق رکھنے والی بچی طاہرہ نے دوسافٹ وئیر بنائے ہیں۔انھوں نے زور دیا کہ یہ ریا ست کی ذمہ داری ہے کہ بچیوں کوسائنس کی اعلیٰ اورمعیاری تعلیم دیں تاکہ وہ دنیا کا مقابلہ کرسکیں۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
22 مناظر