امیر مقام اور ان کے حواری سوات کے ترقی میں روکاوٹیں ڈال رہے ہیں،ڈاکٹر حیدر




خوازہ خیلہ (زمونگ سوات ڈاٹ کام)ایم پی اے و پارلیمانی سیکرٹری برائے انٹی کرپشن ڈاکٹر حیدر علی خان نے این ایچ اے کے زرعی زمین میں غیر قانونی طور پر سروے کے مخالفت کر تے ہوئے کہا ہے کہ این ایچ اے دریائے سوات کے کنارے مذکورہ سڑک کو تعمیر کریں ۔ انہوں نے کہا ، کہ ضلعی ناظم پس پردہ معافیاں مانگتا ہے ، اور عوام کے سامنے آکر ڈبل گیم کھیل رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پورے کے پی کے ، اور بالخصوص پی کے چیاسی میں ریکارڈ ترقیاتی کام کروائے ہیں، اور امیر مقام اور ان کے حواری سوات کے ترقی میں روکاوٹیں ڈال رہے ہیں، وہ گزشتہ روز خوازہ خیلہ میں اپر سوات پریس کلب کے ساتھ میٹ دی پریس سے خطاب کر رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن نزدیک آتے ہی ، یہ سیاسی مداری نکل آتے ہیں ، اور مختلف طریقوں سے عوام کو دھوکہ دینے کی کو شش کر تے ہیں ۔ انہوں نے کہا چیک پوسٹوں کے حوالے سے حالیہ ایشو بھی سیاسی ہے ، اور ایک سازش کے تحت ہمارے مختلف اداروں کو بدنام کر نے کی کو شش کی جارہی ہے ، انہوں نے کہا کہ چیک پوسٹوں کے حوالے سے ہمارا موقف واضح ہے کہ چیک پوسٹوں پر سارے ملاکنڈ ڈویژن میں چیکنگ کا طریقہ کار سائنٹیفک بنایا جائے ، اور عوام کو تنگ کرنے سے گریزکیا جائے ، لیکن اگر ایک طرف سیکورٹی فورسز کا جانی نقصان ہو رہا ہے اور دوسری طرف فورسز کے خلاف نعرے بازی کی جائے تو اس کا کیا مطلب لیا جائے ، انہوں نے کہا کہ سواتی عوام مزید ایسے سازشوں کے متحمل نہیں ، جس سے ایک مرتبہ پھر نئے سرے سے حالات کو خراب کر نے کی سازش ہو۔ انہوں نے مزید کہا کہ ضلعی ناظم اپنی نوکری پکی کرنے میں لگے ہیں۔ حالانکہ ایک یونین کونسل کا منتخب شدہ ہے ، اور میں جس حلقے سے منتخب ہوں اسے میں ان کے یونین کونسل سے دس گنا زیادہ ووٹ ہے ، اسی وجہ سے یہ سارے ضلعی کا فیصلہ نہیں کر سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف یہ لوگ ایشو بنالیتے ہیں اور دوسری طرف اس کے حل کے یقین دہانیاں کراکر لوگوں کو گمراہ کر نے کی کوشش کرتے ہیں ۔ ڈاکٹر حیدر نے کہا این ایچ اے ، واپڈا اور دیگر وفاقی اداروں سے عوام تنگ آچکے ہیں ، کیونکہ وہ عوامی ادارے ہونے کے باوجود امیر مقام کے اشاروں پر چل رہے ہیں۔ اور عوامی مشکلات میں اضافہ کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کسی کے ڈوری بلوچستان میں ہے اور کسی کا نااہل نوازشریف کے پاس ، جو وہا ں ہلاتا ہے ، تو ارتعاش یہاں پیدا کرتے ہیں ، یہ لوگ ہمارے سواتی عوام کے فیصلے نہیں کرسکتے۔ انہوں نے کہا کہ بعض لوگ عوام کو گمراہ کر رہے ہیں ، بظاہر کچھ اور نعرے لگاتے ہیں ، لیکن اندر جاکر ان لوگوں سے معافیاں مانگتے ہوئے انہیں شرم نہیں آتی ، انہوں نے کہا کہ جوکچھ میں کہتا ہوں وہ سب کے سامنے کہتا ہوں ۔ انہوں نے حکومتی کارکردگی کے حوالے سے کہا کہ تعلیم صحت اور انصاف کے ساتھ ساتھ تمام صوبائی محکموں کی کارکردگی پہلے سے کافی بہتر ہے ، اور ہم نے باقاعدہ قانون سازی کے ذریعے تمام محکموں کو عوام کے ماتحت بنایا ہے ۔ انہوں نے کہا ، کہ جتنا ترقیاتی کام اس دور میں ہو ا ہے ، سابقہ ستر سالہ دور اقتدار میں اس کی مثال نہیں ملتی ، انہوں نے کہا کہ مقامی سطح سے لیکر یہ لوگ مرکزی سطح تک جھوٹ بولنے کا سہارا لیتے ہیں ، اور ابھی عوام نے انہیں مسترد کر دیا ہے ۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
51 مناظر