فیصلوں کا ہدف میری ذات، عدالتوں کے ذریعے عوامی قیادت نہیں چھینی جاسکتی، اب ہم کیا کرینگے




اسلام آباد(زمونگ سوات ڈاٹ کام)سپریم کورٹ میں آرٹیکل ایف ون 62کے تحت تاحیات ناہلی کے فیصلے پراپنے ردعمل میںسابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ فیصلوں سے ظاہرہوتا ہے کہ ہدف میری ذات ہے، عدالتی فیصلے انتقامی کاروائی ہیں اور مجھے اسی قسم کے فیصلے کی توقع تھی ۔عدالتوں کے ذریعے عوامی قیادت نہیں چھینی جاسکتی، اس سے قبل بھی ہمارے راستے میں رکاوٹیں کھڑی کی جاتی رہی ہیں پہلے بھی ان رکاوٹوں کا مقابلہ کیا اب بھی کریں گے۔ کارکنان صبراور استقامت کا مظاہرہ کرتے ہوئے سیاسی انداز میں ہرچیز کا جواب دیں، نواز شریف نے ن لیگ کے کارکنوں کو ہدایت کی کہ وہ ان کی ’’ووٹ کو عزت دو‘‘تحریک کا حصہ بنیں۔




ایک تبصرہ شامل کریں…
0 Likes
49 مناظر